مَنْ یَّغْفِرُ الذُّنُوْبَ اِلَّا اللّٰهُ “اور خدا کے علاوہ کون گناہوں کا معاف کرنے والا ہے؟” (سورہ آلِ عمران، آیہ، 135)

دینِ مبینِ اسلام میں قاضی کے لیے ایک مجرم سے برتاو کے دوران کیا چیز مستحب ہے؟ کیا حقوق اللہ کی خلاف ورزی پر مجرم کے جرم سے چشم پوشی کی جاسکتی ہے؟کیا شرعی حدود حقوق بشر کے خلاف ہیں؟ دین مبین اسلام میں قصاص کیوں رکھا گیا ہے؟ امیرالمومنین امام علی علیہ السلام ایک زنا کا مرتکب ہونے والے شخص سے کس طرح سے پیش آتے ہیں؟ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہٖ وسلّم زنا کے مرتکب شخص سے کس طرح پیش آتے ہیں؟ کیا ہمیں اپنے عیوب کو فاش کرنا چاہیے؟ خدا وندِ متعال اپنے گناہ گار بندوں سے کس طرح پیش آتا ہے؟

اِن تمام سوالات کے جوابات حاصل کرنے کے لیے آیت اللہ سید عبد اللہ فاطمی نیا کی اِس ویڈیو کا ضرور مشاہدہ کیجئے۔

#ویڈیو #قاضی #مستحب #خدا #بخشنے_والا #پیارا_دین #شراب #زنا #شرعی_حدود #امیر_المومنین #رسول_خدا #عیب #استغفار

کل ملاحظات: 180